Post With Image

لاہور: مال روڈ احتجاج کے دوران سکیورٹی کے پیش نظررینجرزطلب کرنے کافیصلہ کرلیا گیا


لاہور: پنجاب حکومت نے مال روڈ احتجاج کے دوران سکیورٹی کے پیش نظررینجرزطلب کرنے کافیصلہ کرلیا ہے،وزارت داخلہ پنجاب نے رینجرزطلب کرنے کی منظوری کیلئے وزیراعلیٰ پنجاب کوسمری ارسال کردی ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق وزارت داخلہ پنجاب نے مال روڈ پرمتحدہ اپوزیشن کے جلسے اور احتجاج کے دوران حساس مقامات کی سکیورٹی کیلئے رینجرز کی تین کمپنیاں طلب کرنے کافیصلہ کیاہے۔ جس کے تحت وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کورینجرز کی طلبی کیلئے سمری بھی بھجوا دی دی گئی ہے۔وزیراعلیٰ پنجاب کی منظوری کے بعد وفاقی کورینجرز کی طلبی کیلئے خط لکھا جائے گا۔ رینجرزکے دستوں کواحتجاج کے دوران پنجاب اسمبلی،گورنرہاؤس، وزیراعلیٰ ہاؤس ودیگر حساس مقامات پرتعینات کیا جائے گا۔واضح رہے متحدہ اپوزیشن نے مال روڈ پر17جنوری کے احتجاج اور دھرنادینے کااعلان کررکھا ہے۔احتجاجی تحریک کے دوران وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف اور وزیرقانون راناثناء اللہ کے استعفے کیلئے دباؤ بڑھایاجائے گاجبکہ ختم نبوت ﷺ کے قانون میں تبدیلی کے ذمہ داروں کوسزادلانے کامطالبہ بھی کیاجائے گا۔ جبکہ دوسری جانب پیپلزپارٹی کے شریک چیرمین آصف زرداری کا کہنا ہے کہ حکومت کے جانے کا وقت آگیا ہے عنقریب ان حکمرانوں کو گھر بھیجیں گے جب کہ الیکشن میں کسی سے اتحاد مشکل ہے البتہ الیکشن کے بعد ہوسکتا ہے۔ لاہور میں عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے آصف زرداری کا کہنا تھا کہ ہمیں ہمیشہ اچھے کی امید رہتی ہے اور اس بار آر او الیکشن نہیں چلے گا جب کہ شریف برادران کی خواہش ہے کہ ان کا تخت بچ جائے لیکن حکومت کے جانے کا وقت آگیا ہے، اگر ان پر دباو بڑھ گیا تو ان کو استعفی دینا پڑے گا جب کہ طاہرالقادری اگر حکم دیں تو احتجاج طویل ہوسکتا ہے۔ آصف زردای کا کہنا تھا کہ احتجاج کا مقصد پنجاب حکومت سے جان چھڑانا ہے کیوں کہ ان کو عوام کی کوئی فکر نہیں، صرف اپنے اقتدار کی فکر ہے اور آج یہ اپنی ملکیت بچانے کی کوشش کررہے ہیں جب کہ میں نے اور میرے بیٹے نے ہمیشہ ملک میں جمہوریت کی بات کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ احتجاج کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے جب کہ الیکشن میں کسی جماعت سے اتحاد مشکل ہے البتہ الیکشن کے بعد اگر اتحاد ہوجائے تو الگ بات ہے۔ دوسری جانب طاہر القادری کا کہنا تھا کہ کل کے احتجاج میں سب برابر کے میزبان ہیں جہاں ایک ہی اسٹیج ہوگا، آصف زرداری اور عمران خان سمیت سب دھرنے سے خطاب کریں گے، بنیادی طور پر ہمیں ایک دن کا احتجاج کرنا ہے،حالات کے مطابق طے کریں گے کہ احتجاج کتنے روز تک جاری رکھیں گے۔ واضح رہے عوامی تحریک آج سانحہ ماڈل ٹاؤن پر پنجاب حکومت کے خلاف مال روڈ پر احتجاج کرے گی جس میں پیپلزپارٹی اور تحریک انصاف سمیت اپوزیشن کی دیگر جماعتیں شامل ہوں گی۔